Issue# 205

15th Feb 2011

Old Archives

عنبرین کے قلم سے

 

عمر کیساتھ وزن کا بڑھنا

Email: ambreenfaizpaki@yahoo.com

عنبرین فیض احمد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ الریاض

اکثر یہ دیکھا گیا ہے کہ عمر کیساتھ ساتھ وزن بھی بڑھتا جاتا ہے ۔ جب کسی بھی آدمی کی عمر چالیس سال یا اس سے زائد ہو جاتی ہے تو اس میں وزن کو بڑھانے کی صلاحیت بڑھ جاتی ہے۔ اور مشاہدے سے یہ پتہ چلتا ہے کہ جب وزن بڑھ جاتا ہے تو دنیا بھر کی بیماریاں یک دم سے آ گھیرتی ہیں۔ اس لئے عمر کے ساتھ ساتھ اپنے کھانے پینے پر خصوصی توجہ دینی چائیے۔ یہ بات قابلِ غور ہے کہ ہم عمر کے ساتھ ساتھ کھانے پینے میں کمی کر دیتے ہیں تا کہ وزن میں خواہ مخواہ اضافہ نہ ہواور یہ کہ جسم کے اندر Calories کم سے کم ہوں۔ یا پھر ورزش بہت زیادہ کرنے لگتے ہیں جو ہماری صحت کے لئے نقصان دہ بھی ہو سکتی ہے۔ سائنسی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ کم کھانے یا بلکل نہ کھانے سے وزن نہیں گھٹتا بلکہ اور بڑھ جاتا ہے۔ اس بات کا خاص خیال رکھیں کہ ہم جو بھی چیز کھاتے ہیں اسکے بار ے میں یہ جاننا ضروری ہے کہ اس میں حرارت کتنی مقدار میں موجود ہے ۔ اگر اس بات کو زہن میں رکھا جائے تو کوئی وجہ نہیں کہ ہمیں وزن کے بڑھنے کی مصیبت کا سامنا ہو۔
یاد رہے کہ جب وزن بڑھتا ہے تو مختلف قسم کی بیماریاں بھی لگ جاتی ہیں جن میں بلند فشارِ خون اور زیابیطس سرِ فہرست ہیں ۔آئیے آج ہم اس بات نظر ڈالیں کہ عمر کیساتھ وزن کیوں زیادہ ہونا شروع ہو جاتا ہے اور اسکی کیا وجوہات ہیں اور اسکا تدارک کیسے کریں۔

* Testosterone یعنی ہارمون کی کمی:۔
مردوں میں عمر کیساتھ ساتھ ہارمونز میں کمی ہوتی جاتی ہے جسکی وجہ سے نظامِ ہضم پر بھی اثر ہوتا ہے۔ لہٰذا کھانے کو ہضم ہونے میں دقت پیش آتی ہے۔ اور چونکہ غذا کی حرارت میں کمی نہیں ہوپاتی تو نتیجہ تن جسم میں چربی پیدا ہونے لگتی ہے۔ جو بعد ازاں وزن بڑھنے کی وجہ بنتی ہے۔ ٹھیک اسیطرح عورتوں میں بھی عمر کیساتھ ساتھ Estrogen یعنی ہارمونز کی کمی کیوجہ سے وزن میں اضافہ ہونا شروع ہونے لگتا ہے۔

* نقل و حرکت میں کمی : ۔
خیال رہے کہ نہ صرف نوجوان لوگوں کیلئے مضبوط پٹھوں کی ضرورت ہوتی ہے بلکہ بڑی عمرکے لوگوں میں بھی پٹھوں کا مضبوط ہونا ضروری ہے۔ تا کہ جسم میں چربی کی پیدواوار کم سے کم ہو۔ لیکن بدقسمتی سے جیسے جیسے عمر میں اضافہ ہوتا جاتا ہے انسانی نقل و حرکت میں کمی آ جاتی ہے با نسبت جوان عمری کے۔ جو بعد ازاں جسمانی پٹھوں کے کم استعمال کی وجہ سے ان میں کمزوری پیدا ہونی شروع ہو جاتی ہے ۔

* جسم کا نظام : ۔
دیکھنے میں آیا ہے کہ جیسے جیسے عمر بڑھتی جاتی ہے جسمانی نظام جس کے تحت انسانی جسم کام کرتا ہے اس میں کمی آ جاتی ہے ۔ لہٰذا جسم کی چربی زائل نہیں ہو پاتی جیسا کہ ایک جوان آدمی کر سکتا ہے ۔ اس لئے وقت کیساتھ ساتھ وزن میں اضافہ ہو تاجاتا ہے۔
لہٰذا آج میں آپ کو بڑھتی عمر کے لحاظ سے مختلف طریقوں سے وزن میں کمی کے بارے میں بتاؤں گی۔ جو کچھ اس طرح ہیں۔

1 ۔ جسمانی نقل و حرکت:۔
یہ بات زہن میں رکھیں کہ کہ ہر وقت اپنے آپ کو چاک و چوبند رکھنے کیلئے اپنے آپکو کسی نہ کسی جسمانی نقل و حرکت میں مصروف رکھیں ۔ اسکے علاوہ اپنے آپکو چاک و چوبند رکھنے کا سب سے بہترین طریقہ ورزش کرنا ہے۔ لیکن اس بات کو زہن میں رکھتے ہوئے ورزش کریں کہ کسی ڈاکڑیا کسی ورزش سکھانے والے ماہر کے مشورے یا ہدایت کے مطابق ہی ورزش کریں۔ کیونکہ عمر کے ساتھ ساتھ ورزش کے طریقوں میں بھی تبدیلی آتی جاتی ہے۔ مذید یہ کہ انسان جب

بوڑھا ہوتا ہے تو اس میں جسمانی طور پر اتنی طاقت نہیں ہوتی جتنی جوانی میں ہوا کرتی ہے۔
2 ۔ Dieting یعنی کھانے میں احتیاط :۔
تحقیق سے یہ پتہ چلا ہے کہ Dieting کوئی خاطر خواہ اثر نہیں ڈالتی بلکہ دیکھنے میں یہ آیا ہے کہ اس سے انسانی جسم پر اُلٹا منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں ۔ یہاں میں ایک بات بتاتی چلوں کہ Dieting سے وزن کم نہیں ہوتا بلکہ بڑھتا ہے ۔ اگر کسی کو Dieting کرنا ہو تو سب سے پہلے کسی ماہر ڈاکڑ سے Dieting پلان ترتیب دلوائیں اور اس پر بعد ازاں سختی سے عمل پیراں ہوں ۔ ایسا Dieting پلان جس میں پھل سبزیاں نشاستہ گوشت اور بادام موجود ہوں ۔ یاد رہے کہ ایسی غذا کا استعمال کریں جس سے جسمانی طاقت میں اضافہ ہونہ کے جسم میں چربی کا۔

3۔ لحمیات والی غذائیں :۔
بڑھتی عمر کیساتھ ساتھ نظامِ ہضم میں کمی آجاتی ہے جس سے لحمیات والی غذا ذرا مشکل سے ہی ہضم ہو پاتی ہے ۔ مگر تھوڑی بہت لحمیات والی غذا لینا بھی ضروری ہے ۔ کیونکہ ان کی وجہ سے پٹھوں میں مضبوطی آتی ہے ۔ اور جسم میں طاقت اور توانائی پیدا ہوتی ہے۔

4۔ غذائی حرارت :۔
خیال رہے کہ حرارت کا استعمال ضرورت سے زیادہ نہیں کرنا چاہیے مگر اسکا استعمال بھی ضروری ہے۔ جب عمر میں اضافہ ہوتا ہے تو ایسے آدمی کو بارہ سو غذائی حرارت کا استعمال کرنا چاہیے کیونکہ حرارت سے جسم میں پھرتی آتی ہے۔ اور جسم میں طاقت پیدا ہوتی ہے۔ اگرآپ کی عمر بڑھتی جا رہی ہے تو آپ اُوپر دی ہوئی ہدایات پر عمل کریں اور ایک صحت مند اور خوشیوں سے بھری زندگی پائیں۔اسکے ساتھ ساتھ اپنے دل و دماغ کو ہمیشہ صاف و شفاف رکھیں ۔ اگر کوئی آپ کے ساتھ زیادتی بھی کرئے تو اسے معاف کر دیں۔ اور ہمیشہ خوش و خرم رہنے کی کوشش کریں۔تو کوئی وجہ نہیں کہ آپ کی زندگی خوشیوں کا گہوارہ نہ بن جائے۔